کمر درد سے بچاؤ۔۔۔ورزش کو اپنالیں



کیا آپ کی کمر میں اکثر درد رہتا ہے ؟ کیا تھوڑی سی دیر کھڑا رہنے سے آپ کی کمر میں درد شروع ہوجاتا ہے ؟ کیا تھوڑی سی مشقت سے آ پ کے کمر میں درد ہوجاتا ہے ؟ اگران سب کا جواب ہاں میں ہیں تو ورزش کو روزانہ کا معمول بنالیں۔



یہ بات حال میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی ہے۔تحقیق میں کہا گیا ہے کہ ورزش کو معمول بنالینا کمر درد کے علاج کا بہترین اور آذمودہ طریقہ کار ہے۔اس تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی ہےکہ جسم کو پھیلنا، مسلز کی ورزشیں اور اسٹینما ٹریننگ کسی اور طریقہ علاج کے مقابلے میں کمر درد کے مریضوں کے لیے زیادہ کامیاب طریقہ ہے۔


سڈنی یونیورسٹی کی اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جو لوگ مختلف قسم کی ورزشوں کے عادی ہوتے ہیں ان میں ایک سال کے اندر کمر درد کی شکایت میں 35 فیصد تک کمی آجاتی ہے۔اسی طرح جو مریض ورزش کے ساتھ ساتھ بھاری چیزوں کو اٹھانے اور بیٹھنے کے مناسب طریقے کو اپناتے ہیں، ان میں اس درد کا خطرہ 45 فیصد تک کم ہوجاتا ہے۔


محققین کا کہنا ہے کہ اس درد کے لیے دستیاب ادویات سے بھی یہی نتائج حاصل ہوتے ہیں۔خیال رہے کہ کمر درد دنیا کے ہر پانچ میں سے چار افراد کو زندگی کے کسی حصے میں اپنا شکار بناتا ہے، جس کی وجوہات میں بھاری اشیاءکو اٹھانا یا جھکنے کا غلط طریقہ وغیرہ قابل ذکر ہیں۔اکثر یہ درد کئی ہفتوں تک برقرار رہتا ہے، مگر بیشتر افراد کے لیے یہ مسئلہ سال بھر جبکہ کچھ کے لیے برسوں اور پھر زندگی کے خاتمہ تک برقرار رہتا ہے۔
محققین نے اس تحقیق کے دوران دریافت کیا کہ جو لوگ ورزش کرتے ہیں ان میں 12 ماہ کے عرصے میں اس کیفیت میں نمایاں کمی آتی ہے اور جسمانی سرگرمیوں کی عادت برقرار رکھنے پر طویل المعیاد فوائد حاصل ہوتے ہیں۔
Courtesy: HTV

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.