کم قیمت میں زیادہ فائدے ۔۔ جانیئے چقندر کھانے اور اسکا جوس پینے سے حاصل ہونے والے مہنگے فوائد، جو آپ کو بہت سی بیماریوں سے بچا جا سکتے ہیں HamariWeb

چقندر، سبزیوں کی ایک متحرک اور ورسٹائل قسم ہے۔ وہ اپنے مٹی کے ذائقے اور خوش رنگ کے لیے مشہور ہیں۔ خوبصورت رنگ کے ساتھ ساتھ یہ انتہائی غذائیت سے بھرپور اور ضروری وٹامنز، معدنیات اور اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرے ہوتے ہیں، جن میں سے کئی میں دواؤں کی خصوصیات ہوتی ہیں۔ چقندر میں منفرد بایو ایکٹیو مرکبات بھی ہوتے ہیں جنہیں بیٹالین کہتے ہیں، جو کسی شخص کی صحت کو فائدہ پہنچا سکتے ہیں۔ آپ چقندر کھانے یا ان کا رس پینے سے یہ فوائد حاصل کر سکتے ہیں۔ دماغ کی صحت: دماغی اور علمی افعال قدرتی طور پر عمر کے ساتھ کم ہو جاتے ہیں، جو ڈیمنشیا جیسے نیوروڈیجینریٹو مرض کا خطرہ بڑھا سکتے ہیں۔ جبکہ چقندر کھانے سے اس میں موجود نائٹریٹ خون کی نالیوں کے پھیلاؤ کو فروغ دے کر دماغی افعال کو بہتر بنا سکتے ہیں اور اس طرح دماغ میں خون کے بہاؤ کو بڑھا سکتے ہیں۔ خون کی کمی کیلیئے: چقندر آئرن سے بھرپور ہوتے ہیں، جو خون کے سرخ خلیات کا ایک لازمی جز ہے۔ آئرن کے بغیر، خون کے سرخ خلیے جسم کے ارد گرد آکسیجن کی نقل و حمل نہیں کر سکتے۔ جن لوگوں میں آئرن کی سطح کم ہوتی ہے وہ بعض اوقات آئرن کی کمی انیمیا کہلانے والی حالت پیدا کر سکتے ہیں۔ خوراک چقندر کو شامل کرنا اس حالت کے خطرے کو کم کر سکتا ہے۔ جگر اور تلی کی بیماری: چقندر کے جوس میں اینٹی آکسیڈنٹس، وٹامن اے، وٹامن بی-6 اور آئرن ہوتا ہے۔ یہ مرکبات جگر کو سوزش اور آکسیڈیٹیو تناؤ سے بچانے میں مدد کرتے ہیں جبکہ جسم سے زہریلے مادوں کو نکالنے کی صلاحیت کو بڑھاتے ہیں۔ اسکے علاوہ یہ تلی کی سوزش کو کم کرتا ہے۔ چقندر کے پانی کو شہد کے ساتھ پیا جائے تو بڑھتی ہوئی تلی کو کم کرتا ہے۔ شہد اور چقندر کا پانی نہ صرف یرقان میں مفید ہے بلکہ صفرا کی نالیوں میں پتھری یا دوسرے اسباب سے پیدا ہونے والی رکاوٹوں کا علاج بھی ہے۔ کینسر سے بچاؤ کیلیئے: چقندر میں کئی مرکبات ہوتے ہیں جن میں کینسر سے لڑنے والی خصوصیات ہیں، جن میں بیٹین، فیرولک ایسڈ، روٹین، کیمپفیرول اور کیفیک ایسڈ شامل ہیں۔ اگرچہ مزید تحقیق کی ضرورت ہے، ٹیسٹ ٹیوب کے مطالعے سے پتہ چلتا ہے کہ چقندر کا عرق کینسر کے خلیوں کی تقسیم اور نشوونما کو سست کر سکتا ہے۔ امراض جلد کیلیئے: جلد کے زخموں، بفہ اور خشک خارش میں چقندر کے قتلوں کو پانی اور سرکہ میں ابال کر لگانا مفید ہے۔ اس مرکب کو دور چار مرتبہ لگانے سے سر کی خشکی غائب ہو جاتی ہے۔ چقندر ایک مفید اور مقوی غذا اور خارش کی متعدد قسموں کے لئے مقامی استعمال کی قابل اعتماد دوا ہے۔

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.