بالوں کی خوبصورتی کے لئے سبز چائے بہترین Bol News

سبز چائے صاف جِلد، وزن میں کمی، کولیسٹرول متوازن سطح پر رکھنے کے لیے ہی فائدہ مند نہیں بلکہ اس میں گرتے بالوں کا بھی علاج موجود ہے ۔ گرین ٹی میں’ا بیوڈیینس ‘ اور’ کیٹیچِن ‘ کمپاؤنڈ بھی پائے جاتے ہیں جوکہ قدرتی طور پر اینٹی آکسیڈنٹ اجزا ہیں۔’ابیوڈیینس‘ اور’ کیٹیچِن ‘ بالوں کےگرنےکاسبب بننے والا ہارمون ’ڈیہائیڈرو ٹیسٹوسٹیرون‘ کی افزائش میں مدد فراہم کرتا ہے، ان دونوں کمپاؤنڈز کو بالوں کو گرنے سے روکنے کے لیے اہم جز سمجھا جاتا ہے ۔بالوں میں سبز چائے استعمال کرنے کا طریقہ  آدھے لیٹر پانی میں گرین ٹی کے چند چمچے شامل کریں اور ا نہیں15 منٹ کے لیے ابال لیں، ٹھنڈا ہونے پر فریج میں محفوظ کر لیں، اپنے بالوں کو کسی کم کیمیکل والے شیمپو سے دھو لیں۔اب اپنے بالوں میں گرین ٹی کی 10 منٹ تک مساج کریں اور ٹھنڈے پانی سے بالوں کو نتھار لیں، یہ عمل ہفتے میں 2 بار دہرا سکتے ہیں ۔اس سے بال صاف ستھرے اور سلکی رہیں گے۔    ہیئرماسک 2 چائے کے چمچ گرین ٹی ، ایک چائے کا چمچ کھوپرے کا تیل ، ایک چائے کا چمچ زیتو ن کا تیل اور ایک انڈے کی زردی لے لیں ۔اب ان اجزا کو اچھی طرح سے یکجان پیس کر ماسک بنالیں اور بالوں کی جڑوں سے لے کر سِروں تک لگا لیں، اس ماسک کو 15 سے 20 منٹ لگا رہنے دیں، بعد میں کسی مائیلڈ شیمپو سے بال دھو لیں۔سبزچائے کااسپرےبالوں کو بہتر اسٹائل دینے کے لیے ایک اسپرے بوتل میں ایلوویر جیل (پیس کر، محلول بنا کر) اور سبز چائے ہم وزن ڈال لیں، اب اس میں حسب ضرورت کوئی بھی اپنی پسند کے تیل کے چند قطرے شامل کر لیں اور اچھی طرح سے ملا لیں ۔اس محلول سے بال چمکدار، حولیاتی آلودگی سے پاک اور سُلجھے ہوئے رہیں گے اور بالوں کا کوئی بھی اسٹائل بنانے میں آسانی ہوگی ۔

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.