Doctor Hospital Medicines
XDR ٹائیفائڈ سے سندھ میں 4 ہلاکتیں، 5 ہزار متاثر Daily Ausaf
صوبہ سندھ میں خطرناک ایکس ڈی آر ٹائیفائڈ کے لیے کوئی حکمت عملی موجود ہی نہیں ہے۔صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو کا کہنا ہے کہ ایکس ڈی آر ٹائیفائیڈ سے نمٹنے کے لے ابھی اقدامات کر رہے ہیں، صوبے میں اب تک 4 ہلاکتیں اور 5 ہزار سے زائد بچے ایکس ڈی آر ٹائیفائیڈ سے متاثر ہوئے ہیں ۔کراچی سمیت سندھ کے مختلف اضلاع میں 2016ء سے سر اٹھانے والا خطرناک ایکس ڈی آر ٹائیفائڈ اب تک 5 ہزار سے زائد بچوں کو متاثر کرچکا ہے۔سندھ کے شہر حیدرآباد سے پھیلنے والا یہ وائرس کراچی، لاڑکانہ، سکھر سمیت مختلف اضلاع کے بچوں کو اپنا نشانہ بنا چکا ہے۔بدقسمتی سے حکومت سندھ کی جانب سے صوبائی سطح پر تاحال مؤثر انتظامات نہیں کیے گئے ہیں۔صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا فضل اعتراف کرتی ہیں کہ سندھ میں ایکس ڈی آر ٹائیفائڈ سے نمنٹے کے لیے حکمت عملی ابھی بنائی جا رہی ہے۔ان کا کہنا ہے کہ لوکل گورنمنٹ سے پانی میں کلورینیشن بہتر بنانے کے لیے کہا ہے، بچوں کو مہلک مرض سے بچانے کے لیے ویکسینیشن کے لیے وفاق کے منتظر ہیں، وفاق کی منظوری کے بغیر ویکسینیشن ملک میں نہیں آ سکتی۔عالمی ادارہ صحت کے مطابق اب تک تقریباً 6ہزار افراد سندھ میں متاثر ہو چکے ہیں، عالمی ادارہ صحت کی جانب سے ایکس ڈی آر ٹائیفایڈ پر الرٹ جاری کیا جا چکا ہے۔
More News View all
Comments
Post Your Comments
Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.
MORE DOCTORS