جگرکے لیے بہترین اور بدترین غذائیں Daily Ausaf

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) جگر انسانی جسم کا حساس اور بہت اہم عضو ہے۔ اسے جسم کی سب سے زیادہ پیچیدہ فیکٹری بھی کہا جاتا ہے جہاں 50 ہزار سے زائد کیمیائی تعاملات ہوتے رہتے ہیں۔جگر اس تمام کارکردگی کے باوجود بہت حساس عضو ہے اور اس سے وابستہ امراض بھی گنتی سے باہر ہیں۔تاہم اپنا طرزِ زندگی بدل کر اپنے جگر کو بہترین حالت میں رکھ سکتے ہیں لیکن ساتھ جگر کو بھی خراب کرنے والے کھانوں اور غذاؤں سے اجتناب بھی ضروری ہے۔ طبی ماہرین نے جگر کی دشمن اور دوست غذاؤں کی یہ فہرست بنائی ہے۔ پہلے جگردوست غذاؤں کا ذکر ہوجائے۔دلیہ:دلیے میں ریشے (فائبر) کی بڑی مقدار موجود ہوتی ہے۔ اس لیے ضروری ہے کہ دن کا آغاز دلیے سے کیا جائے۔ ایک جانب تو یہ موٹاپے کو دور کرتا ہے اور دوسری جانب فائبر جگر کو تندرست رکھتا ہے۔شاخ گوبھی اور دیگر سبزیاں:شاخ گوبھی (بروکولی) اور دیگر سبزیاں جگر کے لیے بہترین کردار ادا کرتی ہیں۔ ایک جانب تو یہ جگر پر اضافی چربی جمع ہونے سے روکتی ہیں تو جگر کی حفاظت بھی کرتی ہے ۔ اس کے لیے ضروری ہے کہ بھاپ میں پکائی ہوئی شاخ گوبھی بادام کے ساتھ کھائیں تو یہ جگر کے لیے بہت مفید ہوگی۔ شاخ گوبھی میں موجود کئی اجزا جگر کو طاقت فراہم کرتے ہیں۔کافی:کافی پینے والے افراد کے لیے اچھی خبر ہے کہ دو تین کپ روزانہ کافی کا استعمال مرغن غذاؤں سے جگر کے پہنچنے والے نقصان کا ازالہ کرتا ہے۔ ایک تحقیق سے انکشاف ہوا ہے کہ کافی جگر کے سرطان کو دور کرنے میں مدد دیتی ہے۔پانی کا استعمال:پانی جگر کے لیے مفید ہے جبکہ یہ وزن کو قابو میں رکھتا ہے۔ ضروری ہے کہ پورا دن پانی کی ضروری مقدار پی جائے اور میٹھے مشروبات اور سافٹ ڈرنکس سے اجتناب کیجئے۔بادام:باداموں میں وٹامن ای کی بڑی مقدار موجود ہوتی ہے جو انسانی جلد اور جگر کے لیے بہت مفید ہوتی ہے۔ یہ جگر کی چربی کو دور کرتی ہے اور فیٹی لیور مرض کو دور کرتی ہے۔

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.