ویٹ لفٹنگ دل کو مضبوط بنانے کے لیے فائدہ مند ورزش ہے : نئی طبی تحقیق Daily Ausaf

امریکا(مانیٹرنگ ڈیسک) وزن یا ویٹ لفٹنگ کرنے کی عادت دل کی صحت کے لیے جاگنگ یا چہل قدمی کے مقابلے میں زیادہ فائدہ مند ثابت ہوتی ہے۔ یہ بات ایک نئی طبی تحقیق میں سامنے آئی۔ گریناڈا کی سینٹ جارجز یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ اگرچہ ہر قسم کی ورزش امراض قلب میں مبتلا ہونے کاخطرہ کم کرتی ہے مگر ویٹ لفٹنگ یا پریس اپس جاگنگ، چہل قدمی یا سائیکلنگ وغیرہ کے مقابلے میں زیادہ فائدہ مند ہوتی ہے۔ تحقیق میں بتایا گیا کہ اس طرح کی سخت ورزش خون کے گردشی نظام کو زیادہ بہتر کرتی ہے۔جس سے دل تک آکسیجن وافر مقدار تک پہنچتی ہے۔ محققین کا کہنا تھا کہ جسم مضبوط بنانے والی ورزشیں اور ہلکی پھلکی جسمانی سرگرمیاں دونوں دل کو صحت مند بناتی ہیں اور لوگوں کو کسی نہ کسی قسم کی ورزش کو اپنالینا چاہئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مگر ویٹ لفٹنگ دیگر کے مقابلے میں زیادہ فائدہ مند ہے۔ اس تحقیق کے دوران محققین نے رضاکاروں میں امراض قلب کا باعث بننے والے عناصر جیسے ہائی بلڈ پریشر، موٹاپے، ذیابیطس اور ہائی کولیسٹرول کا جائزہ لیا اور لوگوں کی جسمانی سرگرمیوں سے اس پر مرتب ہونے والے مثبت اثرات کو دیکھا گیا۔ نتائج سے معلوم ہوا کہ جو بالغ افراد ویٹ لفٹنگ یا سخت جسمانی سرگرمیوں کا حصہ بنیں، ان میں امراض قلب کے باعث بننے والے عناصر کا امکان 30 سے 70 فیصد تک کم ہوگیا۔ اس ورزش کا زیادہ فائدہ نوجوانوں کو درمیانی عمر میں خاص طور پر بہت زیادہ ہوتا ہے۔ اس تحقیق کے نتائج امریکن کالج آف کارڈیالوجی لاطینی امریکا کانفرنس کے دوران پیش کیے گئے۔ اس سے قبل امریکن ہارٹ ایسوسی ایشن کی سفارشات میں لوگوں پر زور دیا گیا تھا کہ ایک ہفتے میں ڈیڑھ سو منٹ کی جسمانی سرگرمیاں جیسے تیز چہل قدمی بھی دل کی صحت میں بہتری لاتی ہے۔

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.