واٹس ایپ ڈیلیٹ پیغامات دوبارہ پڑھنا کیسے ممکن؟ Dawn News

واٹس ایپ نے گزشتہ سال نومبر کے آغاز میں صارفین کا بڑا مطالبہ اس وقت پورا کردیا تھا جب کمپنی نے غلطی سے بھیجے جانے والے پیغامات کو ڈیلیٹ کرنے کا فیچر متعارف کرایا۔اینڈرائیڈ، آئی فون اور ونڈوز فونز استعمال کرنے والے صارفین اس فیچر کے ذریعے کسی بھی پیغام کو سات منٹ کے اندر ڈیلیٹ کرسکتے ہیں۔تاہم اب واٹس ایپ میں ایک خامی سامنے آئی ہے جس سے اندازہ ہوتا ہے کہ یہ فیچر اتنا بھی کارآمد نہیں خصوصاً اس وقت اگر گروپ چیٹ میں کوئی شخص آپ کے ڈیلیٹ کیے جانے والے پیغام پر ریپلائی کا آپشن اختیار کرچکا ہو۔مزید پڑھیں : کیا واٹس ایپ کا یہ خفیہ اور کارآمد فیچر جانتے ہیں؟جی ہاں اگر گروپ چیٹ کے دوران کسی ڈیلیٹ کیے جانے والے میسج پر ریپلائی کردیا جائے تو وہ ڈیلیٹ ہوکر بھی دوسروں کو نظر آجاتا ہے۔انفرادی چیٹ پر بھی یہی نتیجہ دیکھنے میں آتا ہے، جس سے لگتا ہے کہ یہ کوئی بگ نہیں بلکہ فیچر ہی ہے، تاہم اس حوالے سے واٹس ایپ نے ابھی کچھ نہیں کہا۔ایسا اس وقت ہونے کا امکان بہت زیادہ ہے جب آپ ایسے افراد سے چیٹ کرتے ہوں جو ریپلائی کرنے کے عادی ہوں ۔ایک ویب سائٹ دی نیکسٹ ویب نے اس بات کی نشاندہی کی، جس کی تصویر آپ نیچے دیکھ سکتے ہیں۔فوٹو بشکریہ دی نیکسٹ ویبجیسا آپ تصویر میں دیکھ سکتے ہیں کہ اصل پیغام تو کامیابی سے ڈیلیٹ کردیا گیا مگر وہ ڈیلیٹ شدہ ٹیکسٹ دوسرے فرد کے ریپلائی میں موجود ہے۔یہ بھی پڑھیں : واٹس ایپ میں پیغامات شیڈول کرنا سیکھیںواٹس ایپ نے اس سے پہلے یہ کبھی وضاحت نہیں کی تھی کہ ڈیلیٹ فار ایورن ون فیچر ریپلائی کی صورت میں کیسے کام کرے گا۔ویسے اس سے پہلے یہ بات بھی سامنے آئی تھی کہ اینڈرائیڈ نوٹیفکیشن ہسٹری میں بھی ڈیلیٹ پیغامات کو ریکور کرنا ممکن ہے جبکہ کچھ تھرڈ پارٹی ایپس بھی اس مقصد کے لیے تیار کی گئی ہیں۔ Email

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.