موٹاپے،بلڈ پریشر،کولیسٹرول اور جگر کی چربی کو کنٹرول کرنے کیلئے کیوی پھل استعمال کریں،ماہرین صحت Neo

’’نیو نیوز تازہ ترین‘‘ واشنگٹن: طبی ماہرین نے کہا ہے کیوی پھل موٹاپے، بلڈ پریشر، بلند کولیسٹرول اور جگر کی چربی کوکنٹرول کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے،خواتین دوران حمل زائد چکنائی والی غذائیں کھاتی ہیں تو اس سے ان کے بچوں پر مضر اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔ یونیورسٹی آف کولوراڈو کی ماہر کیرن جونشر کی سربراہی میں کی گئی تحقیق کے مطابق جسم کی چربی کئی بیماریوں کی جڑ ہے تاہم اس سے بچاﺅ کے لئے ضروری ہے کہ کیوی پھل کھایا جائے جو موٹاپے، بلڈ پریشر، بلند کولیسٹرول اور جگر کی چربی کوکنٹرول کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔ تحقیق سے معلوم ہوا کہ ”این اے ایف ایل ڈی“ کی بیماری میں جگر پر دھیرے دھیرے چربی چڑھنا شروع ہوجاتی ہے اور صرف امریکہ میں ہی 30 سے 40 فیصد افراد اس سے متاثر ہیں جو شراب نوشی نہ کرنے کے باوجود جگر پر چکنائی سے متاثر ہیں، آگے چل کر یہ مرض شدت اختیار کرکے جگر کے کئی امراض کی وجہ بنتا ہے۔ ماہرین نے تحقیق کے دوران کیوی اور پپیتے میں پایا جانے والا مرکب ’پی کیو کیو‘ ایسی چوہیا کو دیا جو حاملہ تھی اور اسے چکنائی سے بھرپورغذا دینے کے باوجود بھی اس کے بچوں میں فیٹی لیور بیماری بہت کم دیکھی گئی۔ پی پی کیو ایک طرح کا اینٹی آکسیڈنٹ مرکب ہے جو جسم کو فری ریڈیکلز سے بچاتا ہے۔ فری ریڈیکلز ڈی این اے اور دیگر خلیاتی نظام کو شدید نقصان پہنچاتے ہیں۔ ماہرین نے کہا ہے کہ جو لوگ جگر پر چربی اور چکنائی کے شکار ہیں وہ تازہ کیوی ضرور کھائیں کیونکہ اس کا استعمال جگر کو فعال اور چکنائی سے پاک رکھ سکتا ہے۔

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.