شہد اور لیموں کو گرم پانی میں ملا کر پینے سے کیا ہوتا ہے ؟ فائدہ آپ کو آزمانے پر مجبور کردے گا Daily Ausaf

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)موسم سرما میں سینے میں بلغم کی مقدار بڑھنے نتیجے میں انفیکشن کا امکان بڑھ جاتا ہے چاہے کھانسی ہو یا نہ ہو۔سینے میں انفیکشن یا ٹھنڈ متعدد امراض کے نتیجے میں لاحق ہوسکتا ہے جیسے موسمی نزلہ زکام یا فلو وغیرہ۔خوش قسمتی سے --> سینے میں انفیکشن سے ریلیف گھر بیٹھے بھی ممکن ہے جن میں سے کچھ طریقہ کار درج ذیل ہیں۔بھاپ لیناکسی برتن میں پانی گرم کریں اور اپنے سر کو تولیے سے ڈھانیپ کر بھاپ میں سانس لیں۔ یہ گرم بھاپ ہوا کی نالیوں کو کچھ حد تک کھولتی ہے جس کے نتیجے میں مواد کے لیے نکلنا آسان ہوجاتا ہے۔ اسی طرح بھاپ لینا روزمرہ کے تناؤ سے نجات دلانے میں میں بھی مدد دیتا ہے۔زیادہ پانی یا مشروبات کا استعمال جسم میں مناسب مقدار میں پانی کی موجودگی بلغم کے اخراج میں مدد دیتی ہے، ادرک کی گرم چائے بھی اس حوالے سے مددگار ثابت ہوسکتی ہے جبکہ چکن سوپ بھی سینے میں انفیکشن میں ریلیف دلاسکتا ہے۔ سینے میں انفیکشن کے دوران کافی یا کیفین والے مشروبات سے دور رہنا ہی بہتر ہوتا ہے۔شہد بھی فائدہ مندسینے میں ٹھنڈ کے لیے ایک اور قدرتی ٹوٹکا شہد ہے، جسے گرم پانی میں لیموں کے ساتھ ملا کر استعمال کریں۔ ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ شہد کھانسی کے سیرپ سے زیادہ موثر ثابت ہوتا ہے، جو رات کو کھانسی کی روک تھام کرکے بچوں کی نیند کو بہتر کرتا ہے۔کسی تیل کو سونگھنا پودوں سے حاصل کیے جانے والے تیل بھی اس حوالے سے مددگار ثابت ہوتے ہیں، ایک تحقیق کے دوران 14 مختلف اقسام کے تیل آزمائے گئے اور نتائج سے معلوم ہوا کہ وہ متعدد اقسام کے بیکٹریا کے خلاف مددگار ثابت ہوئے، اگرچہ بیکٹریا سے ہونے والا انفیکشن وائرل انفیکشن سے کم شکار کرتے ہیں مگر وہ سینے میں شدید انفیکشن کا باعث بنتے ہیں۔

Post Your Comments

Disclaimer: All material on this website is provided for your information only and may not be construed as medical advice or instruction. No action or inaction should be taken based solely on the contents of this information; instead, readers should consult appropriate health professionals on any matter relating to their health and well-being. The data information and opinions expressed here are believed to be accurate, which is gathered from different sources but might have some errors. Hamariweb.com is not responsible for errors or omissions. Doctors and Hospital officials are not necessarily required to respond or go through this page.